سابق صدرپرویزمشرف کی کاغذات نامزدگی مسترد ہونے کے خلاف اپیل خارج، دوسری لارجر بینچ میں مقرر کرنے کی ہدایت

Spread the love

سپریم کورٹ کے جسٹس عمر عطا بندیال نے سابق صدر وجنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف کے کاغذات نامزدگی مسترد ہونے کے خلاف دائر اپیل پر سماعت کی ، پرویزمشرف کے وکیل نے مؤقف اپنایا کہ سابق صدرنے کراچی سے کاغذات نامزدگی جمع کرائے تھے، سابق صدر ملک سے باہر ہیں ان سے رابطہ نہیں ہو سکا

عدالت عظمیٰ نے سابق صدرپرویز مشرف کی کاغذات نامزدگی مسترد ہونے کے خلاف اپیل غیر موثر ہونے کی بنیاد پر خارج کر دی۔

سپریم کورٹ نے حکم دیا کہ پرویزمشرف دوبارہ الیکشن لڑیں تو کاغذات پر اعتراضات کا دفاع کر سکیں گے، پرویز مشرف نے 2013 کے انتخابات کے لئے کاغذات نامزدگی جمع کرائے تھے، سال 2013 والی اسمبلی 2018 میں ختم ہوچکی ہے ۔

سابق صدراقبال ہاشمی نے عدالت میں مؤقف اپنایا کہ پرویز مشرف نے کراچی سے کاغذات نامزدگی جمع کرائے تھے، مشرف کی دوسری اپیل پشاور ہائیکورٹ کے فیصلے کے خلاف ہے جو آج مقرر نہیں، سابق صدر ملک سے باہر ہیں ، ان سے رابطہ نہیں ہو سکا، عدالت سے استدعا کی گئی کہ دونوں اپیلیں ایک ساتھ ہی مقرر کی جائیں۔

جسٹس عمر عطاء بندیال نے ریمارکس دیئے کہ آج والا کیس خارج ہو چکا، دوسرا جب لگے گا تو فیصلہ ہوجائے گا۔

سپریم کورٹ نے سابق صدرپرویزمشرف کی دوسری اپیل لارجر بنچ کے سامنے مقرر کرنے کی ہدایت کر دی۔ واضح رہے کہ کراچی اور پشاور ہائیکورٹس نے پرویز مشرف کے کاغذات نامزدگی مسترد کرتے ہوئے نااہل قرار دیا تھا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔