سینیٹ اجلاس، حکومتی رویے پر اپوزیشن کا واک آؤٹ، کورم پورا نہ ہونے پر کارروائی ملتوی

Spread the love

سینیٹ کا اجلاس پریذائیڈنگ افسر سینیٹر فیصل سلیم کی زیر صدرات ہوا ، سینیٹ میں قائد حزب اختلاف سید یوسف رضا گیلانی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں روزانہ مہنگائی ہو رہی ہے، لوگوں کو مظاہروں پر اکسایا جا رہا ہے، گذشتہ روز قومی اسمبلی میں بجٹ قوانین کو بلڈوز کیا گیا۔

قائد ایوان شہزاد وسیم نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ کبھی سنتے ہیں عدم اعتماد آئے گا تو کبھی دوسری دھمکیاں دی جاتی ہیں، ساری کی ساری دھمکیاں غیر موثر ہوگئیں، ووٹنگ کے ذریعے ہونے والی قانون سازی کو بلڈوز کرنے کا کہنا سمجھ سے بالاتر ہے۔

وزیر مملکت علی محمد خان نے ایوان میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ قومی اسمبلی میں اسپیکر کے ساتھ جو رویہ رکھا گیا اس پر آج ایوان میں بات کروں گا، ہم نے کبھی اسپیکر یا چیئرمین کی کرسی کے ساتھ اس طرح نہیں کیا، آپ لوگوں نے اگر سچ نہیں سننا تو کرلیں واک آوٹ ۔

اپوزیشن نے علی محمد خان کے بیان پر ایوان سے واک آوٹ کیا تو ساتھ ہی سینیٹر عینی مری نے کورم کی نشاندھی کردی ،  گنتی کی گئی تو صرف 15 سینیٹرز موجود تھے ۔ ایوان میں گھنٹیاں بجائی گئیں لیکن ارکان نہ آئے ، کورم پورا نہ ہونے پر اجلاس پیر کی سہ پہر 3 بجے تک ملتوی کر دیا گیا۔

One thought on “سینیٹ اجلاس، حکومتی رویے پر اپوزیشن کا واک آؤٹ، کورم پورا نہ ہونے پر کارروائی ملتوی

  1. […] سینیٹ کا اجلاس چئیرمین صادق سنجرانی کی زیرصدارت ہوا، وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے سینیٹ میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ اسٹیٹ بینک ترمیمی بل کے بعد ادارے کے بورڈ کی تقرری کا اختیار وزیراعظم کے پاس ہوگا، ادارے کو کسی کی غلامی کے تابع کرنے میں کوئی صداقت نہیں، اپوزیشن لیڈر یوسف رضا گیلانی نے غیرضروری وضاحتیں دیں، موجودہ اپوزیشن لیڈر ووٹ خرید کر سینیٹر منتخب ہوئے ہیں، سینیٹر دلاور نے صاف بتا دیا ہے کہ قائد حزب اختلاف انہیں بلا کر خود غائب ہو گئے […]

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔