کرپشن اور زیادتی کے واقعات کے خلاف معاشرے کو لڑنا ہوگا،وزیراعظم عمران خان

Spread the love

وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ پاکستان سمیت مسلم ممالک کو ایک جیسے مسائل کا سامنا ہے، زیادتی کے واقعات کے خلاف معاشرے کو لڑنا ہوگا ، اسی طرح سے معاشرے کو کرپشن کو ناقابل  قبول بنانا ہو گا ، مسلمان نوجوانوں کو بہت سے دباؤ اور چیلنجز درپیش ہیں، آج کے مسلمان نوجوانوں کو ہم نے اسلام کے مطابق پیغام دینا ہے۔

وزیراعظم نے مسلم دنیا کے ممتازترین دانشوروں کے ساتھ نشست کےدوسرے حصےمیں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ امہ کی نوجوان نسل کو جن مشکلات کا سامنا ہے اس سے انہیں نکالنے کیلئے عظمت رفتہ کی بحالی ضروری ہے،دنیا کو آنے والی نسلوں کے لئے محفوظ بنانے کے لئے بھی موجودہ نسل کو کردار ادا کرنا ہے ، نوجوان نسل کی بہتر تعلیم و تربیت کے لئے ضروری ہے کہ انہیں اسلام کی تعلیمات سے متعلق مکمل آگاہی دی جائے۔

عالمی سلامی اسکالرز کے ساتھ مکالمے میں ڈاکٹرسیدحسین ناصر نے کہا کہ انسانی وجود کو بہت سی مشکلات کا سامنا ہے ، غیرسجنیدہ لوگ اسلام پر بات کرتے ہیں، ہمیں گفتگو سے زیادہ عمل کی ضرورت ہے ، اسلام دورحاضر کے فوری نوعیت کے مسائل کا حل پیش کرنا ہے ، اسلام دورحاضر کے فوری نوعیت کے مسائل کا حل پیش کرتا ہے۔

ممتاز مسلم سکالرز ڈاکٹرحمزہ یوسف نے کہا کہ خواہش کا حد سے بڑھ جانا معاشرے کو نقصان پہنچاتا ہے ، اللہ نے ہمیں خواتین اوربچوں کے تحفظ کی ذمہ داری سونپی ہے، ہمیں نوجوانوں میں خواتین کا احترام پیدا کرنے کی سوچ اجاگر کرنی ہے، ہمیں نبی کریم ﷺ کی سنت پر عمل کرنا ہوگا ۔

ڈاکٹرعبدالحکیم مراد نے اپنی گفتگو میں کہا کہ خواتین کو ہراسانی سمیت مختلف جرائم کا سامنا ہے ، آزاد خیال لوگ کسی چیز کو سنسر نہیں کرنا چاہتے ، انہوں نے مسائل کو عالمی سطح پر حل کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔

ڈاکٹررجب شنتک کا کہنا تھا کہ جدت پسندی، آزاد خیالی کا خطرہ منڈلا رہا ہے، نوجوان اخلاقیات کو اپنائیں،ہمیں اپنے ماضی کو محفوظ بنانا ہوگا ، نوجوانوں کو اپنی تہذیب، مذہب اور تاریخ پر فخر ہونا چاہیے ،

ڈاکٹرچندرا نے کہا کہ نوجوان بتائیں کہ دنیا میں کیا کچھ غلط ہو رہا ہے؟ نوجوان بتائیں کہ  ہمیں مسائل کے فوری حل کی ضرورت کیوں ہے؟ ایسا کرنے سے نوجوانوں کو اپنی پوزیشن واضح کرنے کا موقع ملے گا ، نوجوانوں میں انسان کی عطمت کا واضح تصور موجود ہے ، نوجوان سمجھتے ہیں اسلام کو محدود کر دیا گیا ہے، ڈاکٹرعثمان باقر کا کہنا تھا کہ بین المذاہب ہم آہنگی کا ہونا لازم ہے ، اس وقت روائتی اور جدیدتعلیم یافتہ حلقوں میں مقابلہ ہے ، شیخ عبداللہ نے کہا کہ انٹرنیٹ نے نوجوانوں پر بے پناہ اثرات مرتب کئے ہیں ، نوجوانوں کو کسی بھی بات کا رعمل دلائل کے ساتھ دینا چاہیے ، نوجوانوں کی روحانی اوراخلاقی تربیت کا اہتمام کرنا چاہیے۔

One thought on “کرپشن اور زیادتی کے واقعات کے خلاف معاشرے کو لڑنا ہوگا،وزیراعظم عمران خان

  1. […] 180 ممالک کا کرپشن پرسیپشن انڈیکس جاری کردیا جس کے مطابق پاکستان کرپشن رینکنگ میں 16 درجے اوپر چلا گیا اور کرپشن پرسیپشن […]

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔